En

چینی کمپنیاں پاکستان کے ساتھ فارماسیوٹیکل شعبے میں تعاون کو تیز کریں گی

By Staff Reporter | Gwadar Pro Mar 19, 2022

کراچی (چائنا اکنامک نیٹ) پاکستان میں تیار کردہ ویکسین کی 20 ملین سے زیادہ خوراکیں فراہم کرنے کے بعد ہم پاکستان کے ساتھ تعاون کو مزید گہرا کرنے کیلئے پر امید ہیں"، یہ بات چینی کورونا ویکسین کمپنی کین سینو کے چنلین شن نے حال ہی میں کراچی میں منعقدہ سی پیک بی ٹو بی کانفرنس کے موقع پر کہی۔ .

بورڈ آف انویسٹمنٹ پاکستان کے زیر اہتمام کانفرنس میں اصل نئی ادویات اور روایتی چینی ادویات فراہم کرنے والی کمپنیوں نے پاکستانی شراکت داروں کے ساتھ ممکنہ تعاون کی امید کی اظہار کیا ان کمپنیوں میں لیوای لائف سائنس گروپ ، گوانگژو باے یونشان چنگ ای فارماسیوٹیکل،گوانگژو چھیشن فارماسیوٹیکل شامل تھیں ۔
 
 شن نے چائنہ اکنامک نیٹ کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ جاری وبائی مرض کے مشترکہ چیلنج کا سامنا کرتے ہوئے پاکستانی بھائیوں کے ساتھ ہاتھ ملانا دونوں لوگوں کے لیے فائدے کا باعث بنے گا ۔

 کین سینو ایک مشہور چینی فارماسیوٹیکل کمپنی ہے جس نے گزشتہ سال پاکستان میں مقامی طور پر تیار کردہ پاک ویک برانڈ کی ویکسین لانچ کی ہے۔، چیف بائیولوجیکل پروڈکشن ڈویژن، نیشنل ہیلتھ انسٹی ٹیوٹ پاکستان غزالہ پروین کے مطابق پاک ویک ہر ماہ 30 لاکھ سے زیادہ خوراکیں تیار کر رہا ہے، جو 10 لاکھ کی ابتدائی توقع سے زیادہ ہے اور لاگت میں 25 فیصد کمی کر رہا ہے۔ 

یو ایس پی کے سینئر ٹیکنیکل ایڈوائزر محمد ردیم الدین نے کانفرنس میں کہا پاکستان ادویات کے شعبے میں سرمایہ کاری کا خیرمقدم کرتا ہے۔ "پاکستانی فارماسیوٹیکل سیکٹر سرمایہ کاری کے لیے تیار ہے ۔

700 سے زیادہ مینوفیکچررز اور ہزاروں تقسیم کاروں پر مشتمل پاکستان کی 4 بلین ڈالر کی فارماسیوٹیکل مارکیٹ 12.5 فیصد سی اے جی آرکی رفتار سے بڑھ رہی ہے۔

 محمد نے کہاصحیح شراکت داروں کے ساتھ دواسازی کی برآمدات کی صلاحیت بہت زیادہ ہے ۔ ان کا یہ بھی ماننا تھا کہ چونکہ 2025 تک عالمی جنرک ادویات کی مارکیٹ تقریباً 700 بلین ڈالر تک بڑھنے کی توقع ہے، یہ پاکستانی صنعت کے لیے بڑا حصہ لینے کا موقع ہے۔

ایک وجہ یہ ہے کہ وبائی مرض کے دوران پاکستان غیر ملکی کمپنیوں کے ساتھ مشترکہ منصوبوں کے ذریعے مقامی پیداوار شروع کرنے اور اہم کوویڈ 19 دوا ریمڈیسیور کو 16 ممالک کو برآمد کرنے میں کامیاب رہا۔

 محمد اور زین یہ سوچتے ہوئے اتفاق کرتے ہیں کہ اس قسم کا مزید تعاون ہو سکتا ہے۔

 سی پیک بی ٹو بی کانفرنس میں شرکت کے علاوہ کین سینو نے اس ہفتے پاکستانی صدر ڈاکٹر عارف علوی سے بھی ملاقات کی اور انہیں تازہ ترین پیش رفت سے آگاہ کیا۔ 10 مارچ کو، کولڈ اسپرنگ ہاربر لیبارٹری کے ذریعہ چلائے جانے والے ہیلتھ سائنسز کے پری پرنٹ سرور، میڈ آر وِکس کے شائع کردہ ڈیٹا نے ثابت کیا کہ ایروسولائزڈ AD5-Ncov تھرڈ جنریشن ویکسین اومیکرون کے خلاف بوسٹر کے طور پر زیادہ تحفظ رکھتی ہے۔

  • comments
  • give_like
  • collection
Edit
More Articles