En

گوادر کیلۓ1.2 ایم جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ پر کام شروع

By Staff Reporter | Gwadar Pro Mar 18, 2022

گوادر(گوادر پرو) گوادر میں 1.2 ایم جی ڈی (ملین گیلن یومیہ) واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کی تعمیر کے سلسلے میں گوادر پورٹ فری زون ایریا کے احاطے میں مٹی کی جامع جانچ شروع کردی گئی۔ چینی گرانٹ سے تعمیر کیے جانے والے واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کا مقصد گوادر کے غریب رہائشیوں کو پینے کے صاف پانی کی بلاتعطل فراہمی کو یقینی بنانا ہے۔

زیر تعمیر واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کی جگہ پر مٹی کی جانچ کی نگرانی کرنے والے ماہر ارضیات سجاد علی نے گوادر پرو کو بتایا کہ مٹی کی جانچ  میں تین پوائنٹس پر ڈریجنگ کی جائے گا، چند دنوں میں مکمل ہو جائے گا۔ جہاں تک ڈریجنگ کے پہلے نقطے کا تعلق ہے جس پر تقریباً 33 فٹ ڈرل کیا جانا تھا، نتائج  مثبت رہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پوائنٹ 2 پر بورنگ بھی دو اور تین دنوں میں مکمل ہو جائے گی اور اس کے بعد اگلا مرحلہ جس میں پِلنگ اور فاؤنڈیشن شامل ہے، اس کے مطابق شروع ہو جائے گا۔

1.2 ایم جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کے جی پی اے پراجیکٹ ڈائریکٹر داؤد بلوچ نے کہا کہ تقریباً ایک ایکڑ پر پھیلا یہ پلانٹ چینی گرانٹ 2 بلین روپے کی لاگت سے تعمیر کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ چین کی طرف سے گوادر کے لیے ایک اور تحفہ ہے۔
 
پی سی ون کے مطابق پلانٹ کو 12 ماہ میں مکمل ہونا ہے لیکن امید ہے کہ چائنا ہاربر انجینئرنگ کمپنی (CHEC) 6 ماہ میں کام مکمل کر لے گی۔ اگر ایسا ہوتا ہے تو یہ پاک چائنا ٹیکنیکل اینڈ ووکیشنل انسٹی ٹیوٹ کے بعد ایک اور پروجیکٹ ہو گا جو مقررہ تاریخ سے پہلے مکمل ہو جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ 1.2 ایم جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ منصوبہ گوادر شہر اور گوادر بندرگاہ کی پانی کی طلب کو پورا کرنے کے لیے کافی ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ ابتدائی طور پر 0.5 ایم جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کے منصوبے پر پاکستان اور چین کی حکومتوں کی جانب سے فزیبلٹی اور سروے کے بعد دستخط کیے گئے تھے۔ بعد میں حقیقت پسندانہ بڑھتی ہوئی پانی کی طلب کو دیکھتے ہوئے پی سی ون کو 1.2 این جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کی تعمیر کے لیے حتمی شکل دی گئی۔ 5 جولائی 2021 کو حکومت نے گوادر کے لیے 1.2 ایم جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ کی منظوری دی۔

حال ہی میں اس منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے لیے، انہوں نے کہا، چائنا ہاربر انجینئرنگ کمپنی (CHEC) اور گوادر پورٹ اتھارٹی نے پلانٹ کے قیام کے لیے باقاعدہ معاہدہ کیا۔

جی بی اے کے چیئرمین نصیر احمدکاشانی نے کہا کہ جی بی اے ہمیشہ پینے کے پانی کی فراہمی کے منصوبوں کو ترجیح دیتا ہے کیونکہ وہ جانتا ہے کہ گوادر پینے کے صاف پانی کا مستحق ہے۔ گوادر کی آبادی میں اضافہ ہو رہا ہے اور پانی کی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے لیے 1.2 ایم جی ڈی واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹ فرق پیدا کرے گا۔

  • comments
  • give_like
  • collection
Edit
More Articles