En

بی آر ٹی پشاور دنیا میں سسٹینبل ٹرانسپورٹ سسٹم کے طور پر پہچانا جاتا ہے

By Staff Reporter | Gwadar Pro Feb 4, 2022

پشاور(گوادرپرو) شمال مغربی شہر پشاور دنیا کے ان تین شہروں میں شامل ہے جو اپنی گلیوں کو تبدیل کر رہے ہیں، پائیداری کو ترجیح دے رہے ہیں، اور تمام رہائشیوں کے لیے رسائی اور نقل و حرکت کو بڑھا رہے ہیں۔

پشاور دنیا کے ان تین شہروں میں سے ایک ہو گا جو اگلے ہفتے واشنگٹن ڈی سی، امریکہ میں 2022 کے سسٹینبل ٹرانسپورٹ ایوارڈ کی تقریب میں "نئے اسٹیٹ آف دی آرٹ صنفی اور ماحول دوست بس ریپڈ ٹرانسپورٹ سسٹم" کے لیے تسلیم کیے جائیں گے۔پشاور بی آر ٹی کے علاوہ کولمبیا کے دارالحکومت بگوٹا اور ایستونیا کے شہر تارتو کو اس ایوارڈ سے نوازا جائے گا،کو ان کی گلیوں کو تبدیل کرنے، پائیداری کو ترجیح دینے اور تمام رہائشیوں کے لیے رسائی اور نقل و حرکت کو بڑھانے پر اعزاز دیا گیا ہے۔

 
موبالائزجو کہ انسٹی ٹیوٹ فار ٹرانسپورٹیشن اینڈ ڈیولپمنٹ کا سالانہ سسٹینبل ٹرانسپورٹ سمٹ ہے اور سسٹین ایبل ٹرانسپورٹ ایوارڈ کمیٹی 9 فروری کو اس تقریب کا اہتمام کرتے ہیں۔

 ایس ٹی اے سی کے مطابق پشاور کو معیاری بی آر ٹی سسٹم کے لیے دوسرا ایوارڈ مل رہاہے جو اخراج اور سفر کے اوقات کو کم کرتا ہے، جبکہ خواتین اور معذور مسافروں کے لیے وقف رسائی فراہم کرتا ہے۔ 

بی آر ٹی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کا ایک فلیگ شپ پراجیکٹ 13 اگست 2020 کو شروع کیا گیا تھا۔ یہ منصوبہ 69 ارب روپے کی لاگت سے مکمل ہوا۔ خیبرپختونخوا حکومت نے بی آر ٹی منصوبے کے لیے چین سے بسیں درآمد کیں۔ فروری 2021 میں چین سے 30 بسوں کی آخری درآمد کے ساتھ، بی آر ٹی بسوں کا بیڑا 158 تک پہنچ گیا۔ بسوں کے علاوہ سسٹم چلانے والی تمام مشینری چین سے درآمد کی گئی ہے۔
 

ٹرانس پشاور نے چین سے بی آر ٹی کی سائیکل شیئرنگ سروس 'Zu Bicycle' کے لیے سائیکلیں بھی درآمد کیں۔

 وزیر اعظم کے خصوصی مشیر افتخار درانی نے وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ محمود خان کو ماحول دوست منصوبے پر مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ کے پی حکومت کے لیے ایک تاریخی کارنامہ، پشاور کو پائیدار ٹرانسپورٹ دوست شہر بنانا اور بی آر ٹی کے لیے گولڈ اسٹینڈرڈ حاصل کرنا، جو کہ دنیا میں ٹرانسپورٹ کے لیے اعلیٰ ترین نشان ہے ۔ ۔

  • comments
  • give_like
  • collection
Edit
More Articles