En

شنگھائی الیکٹرک نے تھر بلاک ون میں 3 ارب ٹن کوئلے کے ذخائر دریافت کرلیے

By Staff Reporter | Gwadar Pro Feb 2, 2022

اسلام آباد (گوادر پرو) شنگھائی الیکٹرک نے پاکستان کے صوبہ سندھ کے ضلع تھرپارکر میں اپنے 7.8 ملین ٹن سالانہ اوپن پٹ کول مائننگ پروجیکٹ کی پہلی تہہ کی دریافت کا جشن منایا۔

کمپنی کے مطابق 145 میٹر گہری کوئلے کی تہہ میں تخمینہ 3 بلین ٹن کوئلے کے ذخائر موجودہیں۔

 سائنو سندھ ریسورسز لمیٹڈ (SSRL) کول مائن پراجیکٹ تھر کول بلاک ون انٹیگریٹڈ کول مائننگاینڈ پاور پروجیکٹ کا حصہ ہے جسے چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک ) کے تحت شنگھائی الیکٹرک نے سپانسر کیا ہے۔

3 بلین ڈالر سے زیادہ کے مربوط منصوبے میں 1,320 میگاواٹ کا کول پاور پروجیکٹ بھی شامل ہے، جو کہ تکمیل کے قریب ہے۔ پاکستان میں اس منصوبے کا سب سے زیادہ انتظار ہے کیونکہ یہ قابل اعتماد اور سستی دیسی کوئلے پر مبنی بجلی کا ایک بڑا ذریعہ ہے۔

شنگھائی الیکٹرک کے پاکستان آپریشنز کے میڈیا ونگ کے ایک اہلکار نے گوادر پرو کو بتایا کہ کوئلے کی پہلی تہہ کو نکالنے کی خوشی میں ایک تقریب منعقد کی گئی جس میں کمپنی کے چینی اور پاکستانی عملے نے شرکت کی۔

اہلکار نے تقریب کی ایک تصویر بھی شیئر کی جس میں وہ کان کے کارکنوں کے ساتھ اس جگہ پر جمع تھے جہاں کوئلے کی پہلی تہہ نکالی گئی تھی، اور ایک بینر اٹھا رکھا تھا جس پر لکھا ہوا تھا کہ پاکستان کے تھر کول مائن پروجیکٹ کی پہلی کوئلے کی تہہ کےنکلنے کو گرمجوشی سے منائیں ۔

ایک سینئر کان کنی انجینئر زیارت خان نے گوادر پرو کو بتایا کہ یہ شنگھائی الیکٹرک کے لیے بڑی کامیابی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلی تہہ کی نسبتاً کم گہرائی اس بات کی نشاندہی کرتی ہے کہ اس جگہ پر کوئلے کے وسیع ذخائر موجود ہیں۔ اس کامیابی کا مطلب ہے کہ کمپنی مستقبل قریب میں کمرشل آپریشن شروع کرنے کے لیے تیار ہے۔

  • comments
  • give_like
  • collection
Edit
More Articles