En

چین اور افغانستان تجارتی سرگرمیوں کو فروغ دیں گے

By Staff Reporter | Gwadar Pro Jan 7, 2022

اسلام آباد(گوادر پرو) پاکستان میں چین کے سفیر نونگ رونگ اور اسلام آباد میں افغانستان کے سفارتخانے کے چارج ڈی افیئرز  کے درمیان ملاقات ہوئی  جس میں   افغانستان کی موجودہ انسانی صورتحال اور دونوں ممالک  کے  درمیان تجارتی سرگرمیوں میں توسیع پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
 
  نونگ رونگ نے سردار احمد شکیب سے ملاقات  اسلام آباد میں افغانستان کے سفارتخانے میں کی۔

ایک سرکاری بیان کے مطابق ملاقات کے دوران افغانستان کے لیے انسانی امداد میں اضافے اور افغان حکومت کے ساتھ بات چیت سے متعلق امور زیر بحث آئے۔ انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان تجارت کو وسعت دینے اور افغان تاجروں کے لیے ویزوں اور دیگر سہولیات کی فراہمی پر بھی تبادلہ خیال کیا۔
 
  سردار احمد شکیب   نے سفیر نونگ رونگ کو افغانستان  کا   سوینئر پیش کیا۔
 
پاکستان چین اور افغانستان کے درمیان رابطہ قائم کرتا ہے۔ خیبرپختونخوا   حکومت پہلے ہی چترال-شندور  سی پیک  روٹ کی منظوری دے چکی ہے، جو ضلع کو گلگت اور چین سے  ملاتا ہے۔

افغانستان بھی  سی پیک سے فائدہ اٹھا سکتا ہے، کیونکہ اس  نے پہلے ہی گوادر پورٹ کو ٹرانزٹ ٹریڈ کے لیے استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔

بڑھتے ہوئے انسانی بحران  کے درمیان چین ان ممالک میں سے ایک ہے جو افغانستان میں انسانی ہمدردی کی سرگرمیوں میں سب سے آگے ہے اور تجارتی سرگرمیوں کے ذریعے کابل کو اپنی معیشت کی تعمیر نو میں مدد کر رہا ہے۔

ستمبر 2021 میں چین نے افغانستان کو 200 ملین  آر ایم بی کی امداد کا اعلان کیا۔ امداد کی پہلی کھیپ جس میں بنیادی طور پر گرم سامان شامل ہے، 29 ستمبر کو چین سے افغانستان پہنچا۔ چین کی طرف سے عطیہ کردہ انسانی امداد ملک کے مختلف حصوں میں ضرورت مندوں میں تقسیم کی جا رہی ہے۔

انسانی امداد کے علاوہ چین نے سب سے پہلے افغانستان سے چلغوزہ خریدا تاکہ دائمی معاشی مشکلات میں افغان کسانوں کی مدد کی جا سکے۔ چلغوزہ لے جانے والا پہلا طیارہ کابل سے یکم نومبر کو شنگھائی پہنچا، جس نے دونوں ممالک کے درمیان ''پائن نٹ ایئر کوریڈور'' کی بنیاد رکھی۔ اب تک افغانستان چین کو  چلغوزے کی 10 پروازیں بھیج چکا ہے اور دلچسپ بات یہ ہے کہ چین میں صرف چند منٹوں میں 26 ٹن چلغوزہ فروخت ہو چکا ہے۔

  • comments
  • give_like
  • collection
Edit
More Articles